آن لائن ماسک فروخت کرنے والوں کی مشکل میں اضافہ ہو گیا، فیس بک نے انتہائی قدم اُٹھا لیا

Online mask sale has been banned
08مارچ2020
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (سان فرانسسکو) دنیا بھر میں پھیلنے والے مہلک وائرس کورونا نے سب کو خوف زدہ کیا ہوا ہے اور سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر اس حوالے سے بہت ساری افواہیں بھی زیر گردش ہیں۔

سوشل میڈیا کمپنیز نے کورونا وائرس سے متعلق بے بنیاد افواہوں کو روکنے کے لیے مختلف اقدامات کیے تاکہ صارفین کسی بھی بڑی پریشانی سے محفوظ رہ سکیں۔ فیس بک نے سرجیکل ماسک کے حوالے سے شائع ہونے والے تمام اشتہارات فی الفور بند کرنے کا اعلان کر دیا۔

کمپنی کے مطابق اس اقدام کا مقصد یہ ہے کہ ہر شخص مارکیٹ سے ہی ماسک خریدے اور کوئی بھی کرونا وائرس کے حوالے سے ناجائز فائدہ نہ اٹھا سکے۔ فیس بک نے اس سے قبل ڈبلیو ایچ او کو پیش کش کی تھی کہ وہ کرونا وائرس کی آگاہی سے متعلق اشتہارات فراہم کرے جنہیں بالکل مفت شائع کیا جائے گا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے: اسرائیل میں کورونا وائرس کی ویکسین تیار کر لی گئی

یاد رہے کہ چین کے شہر ووہان سے شروع ہونے والا مہلک کرونا وائرس دنیا کے90 سے زائد ممالک میں پھیل چکا ہے جس سے ایک لاکھ سے زائد افراد متاثر ہوئے جبکہ 3400 سے زائد اموات بھی ہوئیں۔

عالمی ادارۂ صحت نے کرونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کو دنیا بھر کے لیے خطرہ قرار دیتے ہوئے تمام ممالک سے اپیل کی کہ وہ اس معاملے پر سنجیدگی سے سوچیں وگرنہ بہت ساری انسانی جانوں کا ضیاع ہو سکتا ہے۔

Facebook Comments