پریانکا چوپڑا کو خیر سگالی سفیر کے عہدے سے ہٹائے جانے کے مطالبے پر اقوامِ متحدہ نے بیان جاری کر دیا

23اگست2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (نیویارک) اقوامِ متحدہ کے ترجمان نے بولی ووڈ اداکارہ پریانکا چوپڑا کو خیر سگالی سفیر کے عہدے سے ہٹائے جانے کے مطالبے پر اپنا بیان جاری کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اقوامِ متحدہ کے ترجمان نے اپنے بیان میں پریانکا چوپڑا کے خلاف سامنے آئے مطالبے پر کہا کہ اداکارہ ذاتی حیثیت میں کوئی بھی بیان دے سکتی ہیں۔ اقوامِ متحدہ کا کہنا تھا کہ پریانکا چوپڑا کا بیان ذاتی تھا تاہم تنظیم کو یہ امید ہے کہ اداکارہ جب بھی بطورِ خیر سگالی سفیر بات کریں گی تو غیر جانبداری کا مظاہرہ کریں گی۔

واضح رہے کہ وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری نے چند روز قبل اقوامِ متحدہ کے چلڈرنز فنڈ (یونیسف) کے سربراہ کو خط لکھ کر بھارتی اداکارہ پریانکا چوپڑا کے جنگ کی حمایت میں بیان دینے پر انہیں خیر سگالی سفیر کے عہدے سے ہٹانے کی درخواست کی تھی۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ پریانکا چوپڑا نے ایسا کیا کہا کہ سوشل میڈیا پر صارفین نے اُنہیں تعصب پسند کہنا شروع کر دیا؟

یونیسیف کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ہینریتا ایچ فور کو لکھے گئے خط میں شیریں مزاری نے نشاندہی کی تھی کہ پریانکا چوپڑا، جو 2016 ءمیں یونیسیف کی عالمی خیر سگالی سفیر نامزد ہوئی تھیں، نے عوامی سطح پر بھارتی حکومت کے اقدامات کو سراہا اور پاکستان کو بھارتی وزیرِ دفاع کی جانب سے ملنے والے جوہری حملے کی دھمکی کی بھی حمایت کی۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ تمام باتیں امن اور خیرسگالی کے اصولوں کے منافی ہیں، اداکارہ کی جنگ جوئی کی حمایت نے ان کا اقوامِ متحدہ کا نمائندہ ہونے پر سوال کھڑا کر دیا ہے۔

شیریں مزاری کا مزید کہنا تھا کہ اگر انہیں فوری طور پر نہیں ہٹایا جاتا تو اقوامِ متحدہ کے خیر سگالی سفیر برائے امن کا نظریہ عالمی سطح پر مذاق بن کر رہ جائے گا۔

Facebook Comments