لبنانی وزیر اعظم نے انتہائی بے باک ماڈل کو اربوں روپے کیوں دئیے ؟

Candice Van with Saad Hariri
07اکتوبر2019
(فوٹو گلف نیوز)

ویب ڈیسک: لبنانی وزیر اعظم سعد حریری نے جنوبی افریقہ کی انتہائی بولڈ ماڈل کو ملاقاتوں کے عوض ڈھائی ارب روپے دیے ہیں۔

یہ واضح نہیں ہے کہ لبنانی وزیر اعظم سعد حریری نے محض ملاقاتوں کے لیے اتنی خطیر رقم ماڈل کو فراہم کی یا انہوں نے رقم کے عوض ماڈل سے کچھ فوائد بھی حاصل کیے۔

امریکی اخبار کی جانب سے لبنان کے49 سالہ وزیر اعظم کی جانب سے خود سے19 برس کم عمر مگر انتہائی بولڈ ماڈل کو خطیر رقم دیے جانے کے انکشاف کے بعد لبنان میں ایک نئی بحث چھڑ گئی ہے اور لوگ سعد حریری کی مخالفت کر رہے ہیں۔

جہاں مخالفین سعد حریری پر تنقید کر رہے ہیں، وہیں ان کے حامی اس رپورٹ کو بے بنیاد قرار دے رہے ہیں، ساتھ ہی دعویٰ کر رہے ہیں کہ سعد حریری نے عوامی پیسے کو ضایع نہیں کیا۔ امریکی اخبار ’نیویارک ٹائمز‘ میں شائع رپورٹ کے مطابق سعد حریری نے جنوبی افریقہ کی 30 سالہ بولڈ ماڈل کینڈس ون دیر مروی کو 2013 سے 2015 کے درمیان وقفے وقفے سے ایک کروڑ 60 لاکھ ڈالر کی رقم فراہم کی۔

رپورٹ کے مطابق سعد حریری نے جنوبی افریقن ماڈل کو ایک ایسے وقت میں خطیر رقم فراہم کی جب وہ وزیر اعظم نہیں بنے تھے، تاہم وہ اپنی سیاسی جماعت کے اہم عہدے پر براجمان تھے۔ سعد حریری دسمبر 2016 میں لبنان کے وزیر اعظم بنے ہیں اور ان کی جانب سے بولڈ ماڈل کو پیسے دیے جانے کا واقعہ ان کے وزارت عظمیٰ پر براجمان ہونے سے کم سے کم ڈیڑھ سال قبل پیش آ چکا تھا۔

امریکی اخبار نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ ہے کہ سعد حریری کی جانب سے جنوبی افریقہ کی ماڈل کو دی جانے والی رقم سے لبنانی و جنوبی افریقی قوانین کی خلاف ورزی نہیں ہوئی۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سعد حریری کی جانب سے جنوبی افریقی ماڈل کو فراہم کی گئی رقم کے دستاویزات جنوبی افریقہ کی عدالت سے حاصل کیے گئے جن کے مطابق ماڈل نے بعد ازاں حکومت کو اس رقم کی ٹیکس بھی ادا کی۔

رپورٹ کے مطابق چونکہ سعد حریری نے یہ رقم کسی عوامی عہدے پر براجمان ہونے سے قبل ماڈل کو ادا کی تھی، اس وجہ سے اس رقم کی ادائگی کا معاملہ لبنان یا جنوبی افریقہ کے کسی قانون کی خلاف ورزی میں نہیں آتا۔ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ سعد حریری نے ایک ایسے وقت میں ماڈل کو خطیر رقم ادا کی جب ان کی سعودی عرب میں کام کرنے والی کنسٹرکشن کمپنی ’سعودی اوگر‘ ملازمین کو تنخواہیں دینے سے قاصر تھی۔

رپورٹ کے مطابق سعد حریری کا شمار مشرق وسطیٰ کے امیر ترین افراد میں ہوتا ہے جن کی دولت ایک ارب 90 کروڑ ڈالر تک ہے اور انہیں بیشتر دولت اپنے والد رفیق حریری کی جانب سے چھوڑے گئے اثاثوں سے حاصل ہوئی۔

لبنانی وزیر اعظم کی جانب سے محض ماڈل سے ملاقاتوں کے عوض انہیں خطیر رقم دیے جانے کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد کئی لبنانی افراد نے سعد حریری پر تنقید کی جب کہ ان کے حامیوں کا کہنا تھا کہ انہوں نے یہ رقم اپنی ذاتی اکاؤنٹ سے خرچ کی۔

امریکی اخبار کی رپورٹ سامنے آنے کے بعد تاحال سعد حریری نے کوئی بیان نہیں دیا اور نہ ہی ان کی اہلیہ نے ماڈل سے ملاقاتوں کےعوض شوہر کی جانب سے خطیر رقم خرچ کیے جانےپر کوئی بیان دیا ہے۔

سعد حریری نے جب ماڈل کو ملاقاتوں کے عوض خطیر رقم دی اس وقت وہ شادی شدہ اور 2 بچوں کے والد تھے۔ سعد حریری نے 1988 میں شادی کی تھی اور انہیں تین بچے ہیں، ان کا شمار مغرب کے پسندیدہ عرب حکمرانوں میں کیا جاتا ہے، وہ یورپی ممالک کے تواتر سے دورے کرتے رہتے ہیں۔

Facebook Comments