ہولی ووڈ اداکارہ اسکارلٹ جانسن نے عجیب و غریب کردار ادا کرنے کی خواہش کا اظہار کر دیا

15جولائی2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (ہولی ووڈ) ہولی ووڈ اداکارہ اسکارلٹ جانسن کو ہمیشہ فلموں میں منفرد اور اچھوتے کردار کرنے کی وجہ سے جہاں سراہا جاتا ہے، وہیں ان پر تنقید بھی کی جاتی ہے۔

اسکارلٹ جانسن کو 2017ء میں ریلیز ہونے والی سائنس فکشن فلم ’گھوسٹ ان دی شیل‘ میں سائبروگ سپر سولجر کا کردار ادا کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ اس فلم میں اسکارلٹ جانسن نے ایک ایسی بہادر سیکیورٹی افسر خاتون کا کردار ادا کیا تھا، جس کا جسم عام انسانوں کے اعضاء سمیت روبوٹک اعضاء کا مکسچر ہوتا ہے۔ یہ کردار جاپانی سائنس فکشن کہانیوں سے لیا گیا تھا اور فلم کی کہانی بھی جاپانی سائنس فکشن ناول سے لی گئی تھی۔

اسکارلٹ جانسن فلم میں ایک خیالی سیکیورٹی ادارے کی جانب سے سیکیورٹی افسر مقرر کی جاتی ہیں۔ یہ کردار ادا کرنے پر اسکارلٹ جانسن پر دوسروں کی ثقافت کو برے انداز میں پیش کرنے کا الزام لگایا گیا تھا۔ علاوہ ازیں گذشتہ برس اسکارلٹ جانسن کو اس وقت شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا جب انہوں نے ہولی ووڈ کرائم فلم ’رب اینڈ ٹب‘ میں ایک ٹرانس جینڈر مرد کا کردار ادا کرنے کی پیش کش قبول کی تھی۔

اسکارلٹ جانسن کی جانب سے فلم میں ٹرانس جینڈر مرد کے کردار کی پیش کش قبول کئے جانے کے بعد انہیں دنیا بھر سے تنقید کا سامنا کرنا پڑا اور ان پر تنقید کرنے والے افراد کا کہنا تھا کہ جب 21 ویں صدی میں ٹرانس جینڈر اداکار موجود ہیں تو ایک خاتون کو مرد ٹرانس جینڈر بنانے کی کیا ضرورت ہے؟ شدید تنقید کے بعد اسکارلٹ جانسن نے فلم میں مرد ٹرانس جینڈر کا کردار ادا کرنے سے معذرت کر لی تھی، تاہم انہوں نے اس وقت اس موضوع پر زیادہ بات نہیں کی تھی۔

لیکن اب انہوں نے اس موضوع پر بات کرتے ہوئے نئی بحث کا آغاز کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسکارلٹ جانسن نے فیشن میگزین ’ایز اف میگزین‘ سے خصوصی بات کرتے ہوئے کہا کہ ان کے خیال میں ایک اداکارہ کو اس بات کی مکمل آزادی ہونی چاہیئے کہ وہ فلم میں کس طرح کا کردار ادا کرنا چاہتی ہے۔اسکارلٹ جانسن نے فیشن میگزین کیلئے خصوصی فوٹو شوٹ بھی کروایا اور ان کی تین مختلف تصاویر کو میگزین نے سرورق کی زینت بنایا ہے۔

Scarlett Johansson

میگزین سے بات کرنے کے دوران اداکارہ نے فلم انڈسٹری میں رائج تنقید کے طریقہ کار سمیت اپنی پیشہ ورانہ زندگی پر بھی بات کی۔ اسکارلٹ جانسن کا کہنا تھا کہ اداکاروں کی جانب سے مختلف ثقافتوں یا سیاسی پس منظر کے کردار ادا کرنے کے بعد انہیں اچھے بننے کے درس دینے کا سلسلہ بند ہونا چاہیئے۔ اسکارلٹ جانسن نے کسی بھی کردار کا نام لئے بغیر کہا کہ انہیں لگتا ہے کہ بطور اداکارہ انہیں ہر طرح کے کردار ادا کرنے چاہیئں۔

اداکارہ کے مطابق ان کے خیال میں بطور اداکارہ انہیں کسی جانور، کسی سیارے اور درخت کے کردار سمیت ہر طرح کے کردار ادا کرنے کی آزادی ہونی چاہیئے۔ اسکارلٹ جانسن کا کہنا تھا کہ کیوں کہ بطور اداکار مختلف قسم کے کرداروں کو ادا کرنا ان کا فرض ہے اور ان سے ایسے کردار ادا کرنے کا مطالبہ بھی کیا جاتا ہے۔

Scarlett Johansson

خیال رہے کہ اسکارلٹ جانسن نے ’بلیک وڈو‘ جیسے سائنس فکشن سپر ویمن کردار سمیت کئی طرح کے یادگار کردار ادا کئے ہیں۔ جلد ہی وہ سائنس فکشن فلم ’بلیک وڈو‘ میں ایکشن میں دکھائی دیں گی۔ انہوں نے 1994ء میں فلم ’نارتھ‘ سے کریئر کا آغاز کیا تھا اور اب تک وہ 5 درجن سے زائد فلموں میں جلوہ گر ہو چکی ہیں، علاوہ ازیں انہوں نے دستاویزی فلموں، اسٹیج اور ٹی وی پر بھی اداکاری کے جوہر دکھائے ہیں۔

Facebook Comments