sawab ki duaon ny gunah kar diya mujhe
barri ada se waqt ny tabah kar diya mujhe

munafqat ke shehar mein sazayen harf ko milein
qalam ki roushani ny siyah kar diya mujhe

maray liye har ik nazar malaamaton mein dhal gayi
nah kuch kya to herat nigah kar diya mujhe

khushi jo gham se mil gayi to phool aag ho gaye
junoon bandagi ny khud nigah kar diya mujhe

tamam aks toar ke mra sawal baant ke
ik aainay ke shehar ki sipahh kar diya mujhe

bara karam huzoor ka suna gaya nah haal bhi
samaaton mein dafan aik aah kar diya mujhe

ثواب کی دعاؤں نے گناہ کر دیا مجھے
بڑی ادا سے وقت نے تباہ کر دیا مجھے

منافقت کے شہر میں سزائیں حرف کو ملیں
قلم کی روشنائی نے سیاہ کر دیا مجھے

مرے لیے ہر اک نظر ملامتوں میں ڈھل گئی
نہ کچھ کیا تو حیرت نگاہ کر دیا مجھے

خوشی جو غم سے مل گئی تو پھول آگ ہو گئے
جنون بندگی نے خود نگاہ کر دیا مجھے

تمام عکس توڑ کے مرا سوال بانٹ کے
اک آئنے کے شہر کی سپاہ کر دیا مجھے

بڑا کرم حضور کا سنا گیا نہ حال بھی
سماعتوں میں دفن ایک آہ کر دیا مجھے

Facebook Comments

شاعر کا مزید کلام



escort istanbul
mersin escort bayan
berlin callgirls