is qader dooba hwa dil dard ki lazzat mein hai
tera aashiq anjuman hi kyun nah ho khalwat mein hai

jazb kar lena tajallii rooh ki aadat mein hai
husn ko mehfooz rakhna ishhq ki fitrat mein hai

mehv ho jata hon aksar mein ke dushman hon tra
dil kashi kis darja ae duniya tri soorat mein hai

uf nikal jati hai khatray hi ka moqa kyun nah ho
husn se betaab ho jana meri fitrat mein hai

is ka ik adna karishma rooh woh itna ajeeb
aqal astajab mein hai falsafah herat mein hai

noor ka tarka hai dheemi ho chali hai chandni
hil raha hai dil mra masroof woh zeenat mein hai

اس قدر ڈوبا ہوا دل درد کی لذت میں ہے
تیرا عاشق انجمن ہی کیوں نہ ہو خلوت میں ہے

جذب کر لینا تجلی روح کی عادت میں ہے
حسن کو محفوظ رکھنا عشق کی فطرت میں ہے

محو ہو جاتا ہوں اکثر میں کہ دشمن ہوں ترا
دل کشی کس درجہ اے دنیا تری صورت میں ہے

اف نکل جاتی ہے خطرے ہی کا موقعہ کیوں نہ ہو
حسن سے بیتاب ہو جانا مری فطرت میں ہے

اس کا اک ادنیٰ کرشمہ روح وہ اتنا عجیب
عقل استعجاب میں ہے فلسفہ حیرت میں ہے

نور کا تڑکا ہے دھیمی ہو چلی ہے چاندنی
ہل رہا ہے دل مرا مصروف وہ زینت میں ہے

Facebook Comments


escort istanbul
mersin escort bayan
berlin callgirls