khuda kere meri arz pak par utre

woh fasal Gul jisay andesha e zawaal nah ho

yahan jo phool khilay woh khila rahay barson

yahan khizaa ko guzarnay ki bhi majaal nah ho

yahan jo sabza ugay woh hamesha sabz rahay

aur aisa sabz ke jis ki koi misaal nah ho

ghani ghatain yahan aisi barishein barsaaen

ke patharon ko bhi roedgi mahaal nah ho

khuda kere nah kabhi khham sir e Waqar e watan

aur is ke husn ko tashweesh mah o saal nah ho

har aik khud ho tahazeeb o fun ka Awj kamaal

koi malool nah ho koi khasta haal nah ho

khuda kere ke mere ik bhi hum watan ke liye

hayaat jurm nah ho, zindagi wabaal nah ho

خدا کرے میری ارضِ پاک پر اترے

وہ فصل گل جسے اندیشہ زوال نہ ہو

یہاں جو پھول کھلے وہ کھلا رہے برسوں

یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو

یہاں جو سبزہ اُگے وہ ہمیشہ سبز رہے

اور ایسا سبز کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو

گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسائیں

کہ پتھروں کو بھی روئیدگی محال نہ ہو

خدا کرے نہ کبھی خم سر وقار وطن

اور اس کے حسن کو تشویش ماہ و سال نہ ہو

ہر ایک خود ہو تہذیب و فن کا اوج کمال

کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو

خدا کرے کہ میرے اک بھی ہم وطن کیلئے

حیات جرم نہ ہو ، زندگی وبال نہ ہو

Facebook Comments


escort istanbul
mersin escort bayan
berlin callgirls