ٹرانسجینڈر ایکٹ کے بعد اب لڑکا لڑکے سے اور لڑکی لڑکی سے شادی کر سکے گا

Transgender act
19ستمبر2022
( فوٹو: فائل )

ویب ڈیسک: ( اسلام آباد ) وفاقی حکومت نے ٹرانسجینڈر ایکٹ کو بھاری اکثریت سے پاس کر دیا جس میں ٹرانسجینڈر یعنی ہیجڑے کی تین تعریفیں کی گئی ہیں۔

ایک تعریف کی رو سے ٹانسجینڈر وہ جو پیدائشی طور پر ہوگا جبکہ دوسرا وہ جو ایکسیڈینٹ کی وجہ سے ہو جائے گا جبکہ تیسرا وہ جو ہو تو مرد لیکن خود کو عورت تصور کرے۔ اس بل کے پاس ہونے کے بعد ہم جبس پرستی کا راستہ کھل گیا ہے۔

اس میں پریشان کن بات یہ ہے کہ ایک مرد کی سوچ زنانہ ہے تو وہ عورت کا سرٹیفکیٹ لے گا کہ میں ایک عورت ہوں اور پھر وہ ایک مرد سے شادی کرے گا۔ اسی طرح ایک عورت بھی مردانہ آئی ڈی کے ساتھ ایک عورت سے شادی کرے گی۔

Facebook Comments