کورونا وائرس کی صورتحال کے پیش نظر پاکستان کے مقبوضہ کشمیر سے متعلق گہرے خدشات

Aisha Farooqui
26مارچ2020
(فوٹو : فائل)

ویب ڈیسک: (اسلام آباد) ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے پیش نظر مقبوضہ کشمیر میں شہریوں کو بنیادی سہولتوں تک رسائی دی جائے۔

تفصیلات کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو مقبوضہ کشمیر میں صورتحال پر سخت تشویش ہے، مقبوضہ کشمیر میں بھارتی حکومت فوری کمیونی کیشن لاک ڈاؤن ختم کرے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ کورونا وبا سے نبرد آزما ہونے کیلئے وسائل بروئے کار لارہے ہیں، وزیر خارجہ چیلنج سے نمٹنے کیلئے مختلف وزرائے خارجہ سے رابطے میں ہیں، سارک وزرائے صحت ویڈیو کانفرنس کے انعقاد کے خواہاں ہیں۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ کورونا وائرس کی نازک صورتحال میں بھی ترک عوام غریبوں کو نہیں بھولے

عائشہ فاروقی نے کہا کہ کورونا وائرس سے پاکستان سمیت پوری دنیا کو چیلنج کا سامنا ہے، دفتر خارجہ میں ایمرجنسی سینٹر مسلسل کام کر رہا ہے، کرائسز مینجمنٹ سیل، دفتر خارجہ، پاکستانی مشنز رابطے میں ہیں۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ نواز شریف نے مقبوضہ کشمیر کا کیسے سودا کیا؟ ندیم ملک نے حقائق کی پوٹلی کھول دی

انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں ایئرپورٹس پر پھنسے پاکستانیوں کی واپسی کیلئے کام کر رہے ہیں، سعودی عرب، یو اے ای، قطر کے علاوہ بنکاک سے پاکستانی واپس لائے گئے ہیں۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ مقبوضہ کشمیر میں جنازوں کے دوران بھی احتجاج! عمران خان اور پاکستان کے نعرے بلند

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ روم میں پھنسے پاکستانیوں کو ہمارے مشن نے واپس ان کے گھروں تک پہنچایا ہے۔

عائشہ فاروقی کا کہنا تھا کہ وزیر خارجہ نے مختلف ممالک کے وزرائے خارجہ سے فون پر رابطے کیے ہیں، شاہ محمود قریشی نے کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے مشترکہ حکمت عملی پر زور دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیر خارجہ نے سارک وزرا صحت کی جلد ویڈیو کانفرنس پر زور دیا، شاہ محمود قریشی نے فرانس، جرمن وزرائے خارجہ سے ایران پر پابندیوں کا معاملہ بھی اٹھایا۔

Facebook Comments