وزیر اعظم نے اپنی دو سالہ کارکردگی عوام کے سامنے لانے کا فیصلہ کر لیا

24جولائی2020
(فوٹو : فائل)

ویب ڈیسک: (اسلام آباد) وفاقی حکومت نے اپنی دو سالہ کارکردگی عوام کے سامنے لانے کا فیصلہ کر لیا ہے، اس سلسلے میں وزراء نے کارکردگی رپورٹس تیار کرنا شروع کر دیں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے اپنی دو سال کی کارکردگی قوم کے سامنے لانے کا فیصلہ کر لیا، وزیر اعظم کی ہدایت پر وزراء نے کارکردگی کا تمام ریکارڈ ترتیب دینا شروع کر دیا ہے۔

بعض وزراء کی کارکردگی رپورٹس تیار ہو چکی ہیں، جو سیکریٹریز وزیر اعظم آفس جمع کرائیں گے۔ وفاق قومی پالیسیاں اور خارجہ محاذ میں کامیابیاں عوام کے سامنے رکھے گا کہ وزیر اعظم عمران خان نے معاشی چیلنجز پر کیسے قابو پایا۔

احساس پروگرام کے تحت مستحقین تک امداد پہنچانے کا معاملہ بھی سامنے لایا جائے گا جبکہ معاشی اہداف، قرضوں کی ادائیگی، چینی اور پیٹرول بحران سے متعلق پیش رفت سے بھی آگاہ کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ 18 اگست 2018ء کو وزیر اعظم عمران خان نے ملک کے 22 ویں وزیر اعظم کا حلف اٹھایا تھا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ وزیرِ اعظم نے ناقص کارکردگی کی بنیاد پر 27 وزیروں کو ریڈ لیٹر جاری کر دیا

وزیر اعظم عمران خان نے اپنے پہلے خطاب میں قوم سے کہا تھا کہ جب تک اقتدار میں ہوں کوئی کاروبار نہیں کروں گا، منی لانڈرنگ سے باہر گیا پیسہ واپس لانے کیلئے ٹاسک فورس بنائیں گے، قوم کو اپنے پیروں پر کھڑا کرنے کا ارادہ رکھتا ہوں۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ وفاقی کابینہ کا اجلاس! وزیر اعظم کس وزیر کی کارکردگی سے مطمئن؟

ان کا کہنا تھا کہ حکمرانی کرنے والوں کے رہن سہن سے آپ سب کو بچانا چاہتا ہوں، پاکستان میں وزیر اعظم ہاؤس کے 524 ملازم ہیں، وزیر اعظم ہاؤس 1100 کینال پر واقع ہے، وزیر اعظم کیلئے33 بلٹ پروف سمیت 80 گاڑیاں ہیں، ہم ان کو نیلام کر کے اس پیسے کو قوم کے استعمال میں لائیں گے۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ وزیر اعظم عمران خان نے اپنی ٹیم کو آخری وارننگ دے دی

عمران خان کا کہنا تھا کہ آپ میری ٹیم بنیں، میں مسائل کا مقابلہ کر کے دکھاؤں گا، وزیر اعظم ہاؤس میں نہیں رہائش اختیار کر رہا ہوں، سیکیورٹی کے پیش نظر ملٹری سیکریٹری کے 3 کمروں والے گھر میں رہوں گا۔

Facebook Comments