اب کوئی وڈیرا نہیں بچ پائے گا، وزیر اعظم نے زبردست قانون لانے کی منظوری دے دی

Imran Khan
22جنوری2022
( فوٹو: انٹرنیٹ )

ویب ڈیسک: ( اسلام آباد ) وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم نے کہا ہے کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان نے فوجداری مقدمات میں ترمیم سمیت نئے قوانین لانے کی منظوری دے دی ہے، جن کے تحت موبائل فون کی ویڈیوز، آڈیو ریکارڈنگ اور تصاویر کو عدالتوں میں بطور ثبوت تسلیم کیا جائے گااور انہیں فرانزک لیبارٹری سے ٹیسٹ کی سہولت دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق فروغ نسیم نے وزیراعظم عمران خان کو فوجداری قوانین کے600سے زائد نکات میں ترمیم پر بریفنگ دی ہے۔ فروغ نسیم نے اس حوالے سے ایک ویڈیو بیان میں کہا ہے کہ فوجداری مقدمات کے حوالے سے آئینی ترامیم آئندہ ہفتے منظوری کے لیے کابینہ میں پیش کی جائیں گی۔ کابینہ سے منظوری کے بعد انہیں پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا۔ وزیرقانون کا کہنا تھا کہ ان ترامیم کی منظوری کے بعد ایف آئی آر درج نہ ہونے پر ایس پی کو درخواست دی جا سکے گی،جو درخواست پر عملدرآمد کا پابند ہو گا۔9ماہ میں مقدمات کا فیصلہ لازمی ہو گا۔ اس دورانیے میں فیصلہ نہ ہونے پر متعلقہ ججز ہائی کورٹ کو جواب دہ ہوں گے اور ہائی کورٹ ان کے خلاف انضباطی کارروائی کر سکے گی۔

انہوں نے کہا کہ مجوزہ ترامیم کی منظوری کے بعد ملک بھر کے تھانوں کو سٹیشنری، ٹرانسپورٹ اور ضروری اخراجات سرکاری فنڈ سے ملیں گے۔ بے گناہی ثابت کرنے کے لیے آگ یا گرم کوئلوں پر چلنے جیسی روایات قابل سزا جرم قرار پائیں گی۔ عام جرائم میں ہونے والی 5سال تک کی سزا پر پلی بارگین کی جا سکے گی، جس میں سزا کم کرکے صرف 6ماہ تک ہو سکے گی۔ قتل، جنسی زیادتی، دہشت گردی، غداری اور دیگر سنگین مقدمات میں پلی بارگین نہیں ہو سکے گی۔ 

Facebook Comments