لاہور: مبینہ پولیسں مقابلے کی زد میں آ کر لڑکی جاں بحق

Encounter
22اکتوبر2020
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (لاہور) صوبہ پنجاب کے دارالحکومت میں ڈولفن فورس اور ڈاکوؤں کے درمیان مبینہ مقابلے کی زد میں آ کر 22 سالہ لڑکی جاں بحق ہو گئی۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق لاہور کے علاقے وحدت روڈ پر ڈولفن اہلکاروں اور ڈاکوؤں کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کے نتیجے میں فاطمہ نامی راہ گیر طالبہ گولی لگنے سے جاں بحق ہو گئی، وزیر اعلیٰ پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لے کر آئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کر لی۔

عینی شاہدین کے مطابق زخمی طالبہ کو ایمبولینس نہ ہونے کے سبب رکشے میں اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسی۔ لڑکی دو طرفہ فائرنگ کے تبادلے میں جاں بحق ہوئی ہے، یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ آیا فاطمہ کو ڈاکوؤں کی گولی لگی ہے یا وہ ڈولفن فورس اہلکاروں کی فائرنگ کی زد میں آئی اس کی تفتیش کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق جاں بحق لڑکی کی لاش کو ضابطے کی کارروائی کے لیے مردہ خانے منتقل کر دیا گیا ہے تاہم فاطمہ کے والدین نے پوسٹ مارٹم کروانے سے انکار کر دیا۔ ڈولفن اہلکاروں نے تینوں ڈاکوؤں کو گرفتار کر لیا، پولیس کے مطابق گرفتار ہونے والے ڈاکو ریکارڈ یافتہ ہیں اوران کے خلاف درجنوں ڈکیتی کے مقدمات درج ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار ڈاکوؤں کی شناخت حسن، ارشد اور فیصل کے نام سے ہوئی ہے، ملزمان سے تحقیقات میں مزید انکشافات متوقع ہیں۔

Facebook Comments