مریم نواز اور شہباز شریف کے درمیان اختلافات کھل کر سامنے آ گئے

Maryam Nawaz Shehbaz Sharif
23ستمبر2020
(فوٹو : فائل)

ویب ڈیسک: (اسلام آباد) مسلم لیگ ن کی اعلیٰ قیادت میں اختلافات کھل کر سامنے آ گئے ہیں۔ مریم نواز کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے کسی نمائندے نے فوجی قیادت سے مالقات نہیں کی جبکہ شہباز شریف فوجی قیادت سے ملاقات کی تصدیق کر چکے ہیں۔

تفصیلات کچھ اس طرح ہیں کہ مریم نواز نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے سامنے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف کے کسی نمائندے نے عسکری قیادت سے ملاقات نہیں کی، سیاسی معاملات سیاسی قیادت کو ہی حل کرنے چاہئیں۔

صحافی نے مریم نواز سے سوال کیا کہ کیا شہبازشریف اور خواجہ آصف نواز شریف کے نمائندے نہیں؟ کیا عسکری قیادت سے ڈنر نواز شریف کی اجازت سے ہوا، جس پر مریم نواز نے جواب دیا کہ ڈنر ہوا یا نہیں مجھے اس کا کوئی علم نہیں، البتہ سننے میں آیا ہے۔

مسلم لیگ ن کی نائب صدر کا کہنا تھا کہ سیاسی معاملات سیاسی قیادت کو حل کرنے دیں، ملاقات کیلئے سیاسی قیادت کو بھی نہیں جانا چاہیئے اور فیصلے پارلیمنٹ میں ہونے چاہئیں۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ شیخ رشید نے مریم نواز کے خفیہ مشن سے پردہ اٹھا دیا

انھوں نے کہا کہ اے پی سی کے بعد حکومت میں کافی ہل چل مچ چکی ہے، حکومتی وزرا کے جو بیانات آ رہے ہیں وہ سب کے سامنے ہیں، ن لیگ سے نہ کوئی ش بنے گی نہ ہی کچھ اور بنے گا، مسلم لیگ ن ایک ہے اور ایک رہے گی۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ شہباز شریف اور مریم نواز ایک دوسرے کے دشمن ہیں، شیخ رشید نے انکشاف کر دیا

صحافی نے سوال کیا کہ اے پی سی کی قیادت کون کرے گا ؟ اسمبلیوں سے استعفوں کے فیصلے پر اتفاق نہیں ہوا؟ تو مریم نواز کا کہنا تھا کہ ہم سب اے پی سی کے فیصلوں پرعملدرآمد کے پابند ہیں اور استعفوں کے معاملے پر مشاورت ہوئی ہے، جلد اتفاق بھی ہو جائے گا۔

Facebook Comments