چترال میں مارخور کے شکار کی کوشش ناکام بنا دی گئی

Markhor
11جنوری2020
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (پشاور) خیبر پختونخوا کے ضلع چترال میں مارخور کے شکار میں مداخلت پر تین افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈی ایف او چترال کا کہنا ہے کہ امریکن شکاری مارخور کے شکار کیلئے ٹوشی ٹو آیا تھا، شکار سے پہلے شہری نے ہوائی فائرنگ کر کے جانوروں کو بھگا دیا۔ تاہم مقدمہ درج کر لیا گیا۔ شہری کی فائرنگ کی وجہ سے امریکن شکاری کو جگہ تبدیل کرنا پڑی، اس وقت تک شکار بھاگ چکا تھا۔ امریکن شہری کو ایک لاکھ 50 ہزار ڈالرز کے عوض ٹرافی ہنٹ کا پرمٹ دیا گیا تھا۔ جو پورا نہ ہو سکا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ کیا پاکستان میں ہونے والا یہ سب سے مہنگا شکار ہے؟

واضح رہے کہ 8 جنوری کو گلگت بلتستان میں مارخور کی ٹرافی ہنٹنگ ہوئی تھی جس میں 83 ہزار 5 سو ڈالرز میں مارخور کے شکار کا پرمٹ دیا گیا۔ اسپینش شکاری نے 83500 امریکی ڈالرز فیس دے کر شکار کیا تھا۔ اس سے قبل گذشتہ سال 12 دسمبر کو گلگت بلتستان کے ضلع اسکردو میں اٹلی کے شہری نے سیزن کا پہلا مارخور شکار کیا گیا تھا۔ اٹلی کے شہری کارلو پاسکو نے 85 ہزار امریکی ڈالرز فیس دے کر مارخور شکار کیا۔

محکمہ جنگلی حیات کا کہنا تھا کہ شکار فیس کی 80 فیصد رقم مقامی آبادی اور 20 فیصد رقم حکومت کو دی جائے گی۔

Facebook Comments