پنجاب کی سرکاری جامعات میں اربوں کی کرپشن پکڑی گئی

Government Universities Scandal
01جنوری2021
(فوٹو : فائل)

ویب ڈیسک: (لاہور) صوبہ پنجاب کی اینٹی کرپشن کی تحقیقاتی ٹیم نے 12 بڑی سرکاری جامعات میں 6 ارب 61 کروڑ کا اسکینڈل بے نقاب کر دیا ہے، بڑے پیمانے کی اس بدعنوانی میں وی سیز نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے سرکاری خزانے کو اربوں کا نقصان پہنچایا ہے۔

تفصیلات کچھ اس طرح ہیں کہ پنجاب کی 12 بڑی سرکاری جامعات اینٹی کرپشن کے ریڈار پر آ گئی ہیں، اینٹی کرپشن پنجاب کی تحقیقاتی ٹیم نے 6 ارب61 کروڑ کا اسکینڈل بےنقاب کر دیا ہے۔

اینٹی کرپشن حکام کا کہنا ہے کہ وی سیز کے اختیارات کے ناجائز استعمال سے سرکاری خزانے کو اربوں کا نقصان ہوا، گذشتہ 10 سال میں 4554 غیر قانونی بھرتیاں کی گئیں۔ ڈی جی اینٹی کرپشن نے اسکینڈل کی تحقیقات کیلئے 4 رکنی جےآئی ٹی بنائی تھی، جے آئی ٹی نے کرپشن کی رپورٹ ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب کو پیش کر دی۔

ڈی جی اینٹی کرپشن نے گورنر اور چانسلر کو ملوث وی سیز کیخلاف کارروائی کیلئے مراسلہ ارسال کر دیا ہے، جس میں حکام نے کہا ہے کہ پنجاب کی 12 بڑی جامعات میں پالیسی نظرانداز کر کے بھرتیاں کی گئیں۔

جےآئی ٹی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ گریڈ 1 سے 16 تک 3138، گریڈ 17 اور اس سے اوپر نشستوں پر 1416 غیرقانونی بھرتیاں کی گئیں، سرگودھا یونیورسٹی 1099 غیرقانونی بھرتیوں کےساتھ سرفہرست رہی۔

رپورٹ کے مطابق پنجاب یونیورسٹی میں 689 غیر قانونی بھرتیاں ہوئیں جبکہ بہاالدین زکریا یونیورسٹی میں 789 غیرقانونی بھرتیاں کی گئیں۔

Facebook Comments