عابد علی طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے

Abid Ali Actor
05ستمبر2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (کراچی ) پاکستان ٹیلی ویژن کے کلاسیک عہد میں وارث جیسے ڈرامے سے شہرت حاصل کرنے والے معروف اداکار عابد علی شدید علالت کے بعد 67 سال کی عمر میں انتقال کرگئے۔

عابد علی کافی عرصے سے جگر کے عارضے میں مبتلا تھے اور گزشتہ چند دنوں سے ان کا کراچی کے ایک نجی ہسپتال میں علاج جاری تھا۔ چند دنوں قبل بھی ان کے انتقال کی خبریں سوشل میڈیا پر سامنے آئی تھی مگر اس وقت ان کی بیٹیوں ایمان علی اور رحمہ نے انہیں جھوٹی افواہیں قرار دیا تھا، مگر اب رحمہ علی نے انسٹاگرام اسٹوری میں اپنے والد کے وفات کی تصدیق کی۔

انہوں نے لکھا ‘میرے ہاتھوں میں میرے باپ نے اپنی آخری سانسیں لیں، میں معذرت چاہتی ہوں، اس میں کوئی کال نہیں سن سکتی، ہم اس وقت ایسا نہیں کرسکتے، مگر چونکہ میں نے میڈیا کو بیان دینے کا وعدہ کیا تھا تو ہاں وہ جاچکے ہیں’۔رحمہ علی نے چند گھنٹے قبل ہی ایک اور سوشہ میڈیا پوسٹ میں والد کی زندگی کی تصدیق کرتے ہوئے لکھا تھا ‘وہ تاحال لڑ رہے ہیں، ہم اب بھی پرامید ہیں، یااللہ رحم’۔

عابد علی سترہ مارچ 1952 کو کوئٹہ میں پیدا ہوئے جنھوں نے اداکاری کے ساتھ ساتھ ڈائریکٹر کی حیثیت سے بھی اپنی صلاحیتوں کو منوایا تاہم وہ بنیادی طور پر اداکاری کے میدان کے ہی شہسوار کہلاتے ہیں۔

کوئٹہ میں کالج کی تعلیم کے دوران ہی وہ ریڈیو پاکستان کا حصہ بنے اور پھر 1973 میں لاہور منتقل ہوکر پی ٹی وی میں قسمت آزمانے کا فیصلہ کیا اور ‘جھوک سیال’ کے ذریعے اس میدان میں قدم رکھا، تاہم انہیں اصل شہرت 80 – 1979 میں نشر ہونے والی سیریل ‘وارث’ سے ملی، جس کے بعد انہوں نے وہ عروج حاصل کیا جس کی لوگ تمنا کرتے ہیں، انہوں نے سورج کے ساتھ ساتھ، غلام گردش، مہندی، سمندر، دوسرا آسمان، دشت، ایک حقیقت سو افسانے اور دیگر سپرہٹ ڈراموں میں کام کیا۔

انہوں نے پہلی بیوی سے علیحدگی کے بعد معروف اداکار رابعہ نورین سے شادی کی جبکہ انہوں نے کئی فلموں میں بھی کام کیا۔

حال ہی میں وہ عید الاضحی پر ریلیز ہونے والی فلم پرے ہٹ لو میں بھی جلوہ گر ہوئے تھے۔

Facebook Comments