پہلی بیوی سے اجازت لئے بغیر دوسری شادی کرنے والے شخص کو کڑی سزا مل گئی

15جولائی2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (لاہور) لاہور کی عدالت نے پہلی بیوی سے اجازت لئے بغیر دوسری شادی کرنے والے شخص کو 11 ماہ قید اور ڈھائی لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنا دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کے علاقے اچھرہ کے رہائشی راشد محمود نامی شخص کے دوسری شادی کرنے پر ان کی پہلی بیوی نے عدالت سے رجوع کیا تھا۔ پہلی اہلیہ شمیم بی بی نے عدالت کو آگاہ کیا کہ اس کے خاوند راشد نے اس سے اجازت حاصل کئے بغیر دوسری شادی کی ہے۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ موبائل پر دوستی اور بعد میں شادی کا فلمی ڈراپ سین ہو گیا

ان کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ قانون کے تحت دوسری شادی کرنے کیلئے پہلی بیوی کی اجازت ضروری ہے اور یہ اجازت حاصل نہ کرنے کی صورت میں قانونی کاروائی ہوسکتی ہے۔ وکیل نے عدالت میں دلائل پیش کرتے ہوئے کہا کہ پہلی بیوی سے اجازت لئے بغیر دوسری شادی کرنا قابل دست اندازی جرم ہے۔ سماعت کے دوران دلائل اور شواہد کا جائزہ لینے کے بعد جوڈیشل مجسٹریٹ امان اللہ بھٹی نے دوسری شادی سے قبل پہلی بیوی سے اجازت نہ لینے کا جرم ثابت ہونے پر ملزم راشد کو 2 سال قید اور ڈھائی لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنا دی۔

یہ بھی ملاحطہ کیجئے۔ بہادر دلہے نے گولی لگنے کے باوجود شادی کا لڈو کھا ہی لیا

واضح رہے کہ اس سے قبل مارچ 2019 میں لاہور کے جوڈیشل مجسٹریٹ نے پہلی بیوی سے اجازت لئے بغیر دوسری شادی کرنے والے شوہر کو 3 ماہ قید کے ساتھ ساتھ 5 ہزار روپے جرمانہ کی سزا دی تھی۔ قبل ازیں 24 جون کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے ایک کیس کا 12 صفحات پر مشتمل فیصلے جاری کرتے ہوئے دوسری شادی کیلئے مصالحتی کونسل کی اجازت کو ضروری قرار دیا تھا۔ عدالت نے فیصلے میں کہا تھا کہ بیوی کی اجازت کے باوجود مصالحتی کونسل انکار کر دے تو دوسری شادی پر سزا ہو گی۔

Facebook Comments