نیب نے پنجاب کے سینئر صوبائی وزیر عبدالعلیم خان کو حراست میں لے لیا

06فروری2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (لاہور) نیب (قومی احتساب بیورو) لاہور نے پنجاب کے سینئر صوبائی وزیربلدیات اور کمیونٹی ڈیویلپمنٹ عبدالعلیم خان کو آمدن سے زائد اثاثہ جات اور آف شور کمپنی رکھنے کے جرم میں گرفتار کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نیب لاہور نے عبد العلیم خان کو آف شور کمپنی کیس میں تحقیقات کیلئے طلب کیا تھا،جہاں ان سے پوچھے گئے سوالات کے تسلی بخش جواب نہ دینے پر انہیں گرفتار کر لیا گیا۔

ذرائع کے مطابق عبدالعلیم خان اپنے اسٹاف کے ہمراہ نیب کے دفتر میں پیش ہوئے جہاں انکا اسٹاف باہر انکا انتظار کرتا رہا لیکن نیب آفس سے باہر نہ آنے پر انکا اسٹاف واپس چلا گیا۔

ذرائع کے مطابق عبدالعلیم خان نے دوران حراست ہی اپنا استعفیٰ وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو بھجوا دیا تھا ۔

واضح رہے کہ نیب سینئر صوبائی وزیر کے خلاف آف شور کمپنی اور آمدن سے زائد اثاثہ جات بنانے کے الزام پر تحقیقات کر رہی ہے،عبدالعلیم خان اس سے پہلے تین بار نیب لاہور کے سامنے پیش ہو چکے ہیں تاہم آخری پیشی پر انہیں ایک سوالنامہ دیا گیا جس کا تسلی بخش جواب نہ پا کر نیب نے انہیں حراست میں لے لیا۔

نیب نے عبدالعلیم خان کی اہلیہ ،والد اور والدہ کے اثاثوں کی چھان بین بھی شروع کر رکھی ہے جبکہ انکے مزید عزیز و اقارب کے اثاثہ جات کی تحقیقات کیلئے پنجاب کے ڈپٹی کمشنر کو مراسلے بھیج دئیے گئے ہیں۔

Facebook Comments