مغربی بنگال کے دورے نے نریندرا مودی کے ہوش ٹھکانے لگا دیئے

Narendra Modi
13جنوری2020
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (کلکتہ) بھارتی شہر کلکتہ میں وزیر اعظم نریندرا مودی کی آمد پر ہزاروں مظاہرین سڑکوں پر نکل آئے اور متعصب حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی جس پر نریندرا مودی کو ایئرپورٹ سے گاڑی کے بجائے ہیلی کاپٹر کے ذریعے وزیر اعلیٰ ممتا بینر جی کے گھر جانا پڑا۔

تفصیلات کچھ اس طرح ہیں کہ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق بھارتی وزیر اعظم نریندرا مودی کو متنازع شہریت ترمیمی قانون کے حوالے سے شدید مزاحمت کا سامنا ہے اور ایسا ہی ریاست مغربی بنگال کے دورے پر بھی ہوا۔ ایئرپورٹ پر ہی 30 ہزار سے زائد مشتعل مظاہرین نے احتجاجی ریلی نکالی، ہاتھوں کی زنجیر بنائی اور متنازع شہریت ترمیمی قانون 2019ء کیخلاف شدید نعرے بازی کی۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ نریندرا مودی عمران خان کے سامنے کچھ نہیں! امریکی میڈیا

ایئرپورٹ سے نکلنے والی ہر شاہراہ پر مظاہرین کے جمع ہونے پر وزیر اعظم نریندرا مودی مجبوراً ملٹری ہیلی کاپٹر میں مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ اور متنازع شہریت قانون کی سخت ناقد ممتا بینرجی کے گھر پہنچے جہاں مظاہرین کی بھی بڑی تعداد پہنچنے میں کامیاب ہوگئی تاہم پولیس نے مظاہرین کو وزیر اعلیٰ کے گھر جانے سے روک دیا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ مودی نے دبے لفظوں میں شکست قبول کر لی! نئی دہلی میں تقریب سے خطاب

مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بینر جی نے ملاقات کے دوران دوٹوک موقف اپناتے ہوئے وزیر اعظم مودی سے شہریت ترمیمی قانون کو منسوخ کرنے کی تجویز دی تاہم وزیر اعظم مودی نے مصروفیت کا بہانہ بناتے ہوئے متنازع قانون پر تبادلہ خیال کو اگلی میٹنگ تک موخر کر دیا جس کے بعد وزیر اعلیٰ بینرجی مظاہرین کے ساتھ احتجاج میں شامل ہوگئیں۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ پلوامہ میں مودی سرکار نے خود بھارتی فوجیوں کی جانوں کا سودا کیا، مبینہ آڈیو کال لیک

یاد رہے کہ گذشتہ برس 11 دسمبر کو بھارتی پارلیمنٹ سے شہریت ترمیمی بل منظور ہوا تھا جس کے تحت پاکستان، بنگلا دیش اور افغانستان سے بھارت آنے والے ہندوؤں، سکھوں، بدھ متوں، جین، پارسیوں اور عیسائیوں کو بھارتی شہریت دی جائےگی تاہم مسلمانوں کو محروم رکھا جائے گا، جس کے بعد بھارت بھر میں مظاہروں کا ایک طوفان برپا ہے۔

Facebook Comments