بانی ایم کیو ایم لندن میں گرفتار! نفرت انگیز مواد پھیلانے کے الزام پر فردِ جرم عائد کر دی گئی

10اکتوبر2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (لندن) نفرت انگیز تقریر کے کیس میں بانی متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیوایم) کو لندن میں گرفتار کر لیا گیا ہے، جس کے بعد ان پر انسدادِ دہشتگردی ایکٹ کے تحت فردِ جرم بھی عائد کر دی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کو پولیس حراست میں ویسٹ منسٹر مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا گیا، جہاں انہیں عدالت میں الزامات سے آگاہ کیاجائےگا، جس کے بعد ان کے وکلا ضمانت کی درخواست دائر کریں گے۔

پاکستانی میڈیا کے مطابق نفرت انگیز تقریر کے الزام میں ضمانت ختم ہونے پر بانی ایم کیو ایم تیسری بار لندن کے سدک پولیس اسٹیشن میں پیش ہوئے، جہاں انہوں نے تیسری بار بھی لندن پولیس کے سوالوں کے جوابات نہیں دیئے جس پر انہیں حراست میں لے لیا گیا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ بانی ایم کیو ایم الطاف حسین لندن میں گرفتار

ذرائع کا کہنا ہے کہ لندن پولیس نے بانی ایم کیو ایم کو سوالوں کے جوابات دینے کا مشورہ دیا تھا تاہم جوابات نہ دینے اور شواہد کی روشنی میں پراسیکیوشن نے ان پر فردِ جرم عائد کی ہے۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہےکہ بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کے وکلاء کو آج فردِ جرم عائد کئے جانے کا خدشہ تھا جس کے باعث ان کی ضمانت کے کاغذات پہلے سے ہی تیار کر لئے گئے تھے۔

اطلاعات کےمطابق فردِ جرم عائد ہونے کے بعد بانی ایم کیوایم کے خلاف ٹرائل تقریباً 2 ہفتے میں مکمل ہو جائے گا۔

یاد رہےکہ بانی ایم کیو ایم پر اگست 2016ء میں تقریر کے ذریعے لوگوں کو تشدد پر اکسانے کا الزام ہے، لندن پولیس نے انہیں رواں برس 11 جون کو نفرت انگیز تقریر کے الزام میں گرفتار کیا تھا اور وہ گذشتہ ماہ 12 ستمبر کو بھی ضمانت ختم ہونے پر سدک پولیس اسٹیشن پیش ہوئے تھے۔

Facebook Comments