لندن کی جامع مسجد میں دہشتگردی کا افسوسناک واقعہ! برطانوی وزیر اعظم کا فوری نوٹس

21فروری2020
(فوٹو : سوشل میڈیا)

ویب ڈیسک: (لندن) لندن کی جامع مسجد میں نماز کے دوران ایک شخص نے مؤذن پر چاقو سے حملہ کر دیا۔

برطانوی میڈیا کے مطابق یہ واقعہ وسطی لندن کے علاقے ریجنٹ پارک میں ایک جامع مسجد میں ظہر کی نماز کی ادائیگی کے دوران پیش آیا۔ قاتلانہ حملے میں مسجد کے 70 سالہ بزرگ مؤذن زخمی ہوگئے جنہیں فور طور پر قریبی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر بتائی جا رہی ہے۔

اس افسوسناک واقعے کے فوری بعد نمازیوں نے ملزم کو قابو میں لے کر پولیس کے حوالے کر دیا۔ پولیس نے قاتلانہ حملہ کرنے پر 29 سالہ ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے، اس واقعے کو مبینہ طور پر نسل پرستانہ حملہ کہا جا رہا ہے۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ اسلامو فوبیا سر اٹھانے لگا! نیوزی لینڈ کے بعد برطانیہ میں بھی مساجد پر حملہ

برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے تمام متاثرہ افراد سے افسوس کا اظہار کیا ہے۔

واضح رہے کہ یورپ میں نسل پرستانہ خصوصاً مسلمانوں کے خلاف منافرت اور حملوں میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ گذشتہ روز جرمنی کے دو شیشہ بارز میں فائرنگ سے 9 افراد ہلاک ہوگئے تھے جن میں سے 5 ترک شہری بتائے جاتے ہیں۔ان واقعات کے محرکات کو بھی نسل پرستی سے تعبیر کیا جا رہا ہے۔

Facebook Comments