قابض بھارتی فوج کا مقبوضہ وادی میں نام نہاد سرچ آپریشن جاری! 2 کشمیری شہید متعدد زخمی

15اپریل2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (سری نگر) قابض بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر کے متعدد علاقوں میں نام نہاد سرچ آپریشن کا نہ رکنے والا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے،جبکہ اس دوران دو کشمیریوں کو شہید جبکہ متعدد کو زخمی کر دیا گیا ہے، نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران قابض بھارتی فوج نے دکانوں سے لوٹ مار بھی شروع کر رکھی ہے۔

کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق قابض بھارتی فوجیوں نے بلا اشتعال طور پرشیر پورہ میں راہگیروں کو تشدد کا نشانہ بنایا اور دکانوں میں لوٹ کی۔ فوجیوں کے تشدد سے ایک مقامی شہری عامر گنائی زخمی ہو گیا۔ دوسری جانب بھارتی فوجیوں نے کولگام ، پلوامہ اور شوپیاں کے اضلاع میں تلاشی اور محاصرے کی کاروائیاں شروع کر رکھیں ہیں۔ فوجیوں نے کولگام کے علاقے بوگام میں تلاشی کی پر تشدد کاروائی شروع کرتے ہوئے علاقے کے تمام داخلی اور خارجی مقامات کی ناکہ بندی کر دی جبکہ ضلع کشتواڑ کے مختلف علاقوں میں مسلسل چھٹے روز بھی تلاشی کی کاروائی جاری رہی ۔ تاہم ضلع کے مختلف علاقوں میں نافذ کرفیو میں ایک گھنٹے کیلئے نرمی کی گئی۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ فرانسیسی فلم میکر نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کا مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب کر دیا

بھارت کے تحقیقاتی ادارے این آئی اے نے ضلع پلوامہ کے علاقے رتنی پورہ میں چھاپہ مار کرایک عام شہری ارشاد احمد کو گرفتارکر لیا ہے۔

خیال رہے کہ دو روز قبل مقبوضہ وادی میں بھارتی فورسز کا نہتے کشمیریوں پر ظلم و بربریت کا نہ تھمنے والا سلسلہ جاری ہے۔ شوپیاں میں نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران دو کشمیریوں کو شہید کردیا گیا تھا۔ دوسری جانب حریت قیادت نے کشمیر میں بڑھتے ہوئے مظالم پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔ میر واعظ عمر فاروق کی جانب سے عدالت میں درخواست دائر کی گئی تھی کہ کٹھ پتلی انتظامیہ کو ظلم سے روکا جاسکے۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے۔ حریت رہنما یاسین ملک کی جماعت پر بھارتی پابندی کے خلاف مقبوضہ کشمیر میں ہڑتال

یاد رہے کہ مقبوضہ کشمیر کے مختلف علاقوں میں کٹھ پتلی انتظامیہ نے بھارتی مظالم پر پردہ ڈالنے کی خاطر انٹرنیٹ، موبائل فون سروس بند کردی ہے جبکہ صحافیوں کو بھی متاثرہ علاقوں تک جانے سے روکا جا رہا ہے۔

Facebook Comments