دنیا کی تباہی سے چند لمحے قبل انسانون کی لی گئی آخری سیلفی کیسی ہوگی؟

End of world
05اگست2022
( فوٹو: فائل )

ویب ڈیسک: ( اردو گرام آنلائن ) یہ انتہائی حیرت انگیز بات ہے کہ دنیا نے آج اتنی ترقی کرلی ہے کہ جدید ٹیکنالوجی نے یہ بتانا شروع کردیا ہے کہ دنیا کے خاتمے کے وقت انسان کیسا دکھائی دے گا اور کیا کر رہا ہوگا۔ ویسے تو تصور کرنا ناممکن لگتا ہے کہ انسان دنیا کی تباہی سے کچھ وقت قبل انسان کیسا ہوگا۔

امیج جنریٹر نے اس خیال کو ممکن بنا دیا ہے۔

کرۂ ارض پر لی گئی “آخری سیلفیز” کی عجیب و غریب تصاویر کو ایک مصنوعی ذہانت کے حامل امیج جنریٹر نے دکھایا ہے۔ ٹک ٹاک پر ‘روبوٹ اوورلوڈز’ کے ذریعہ دل دہلا دینے والی تصاویر کسی ڈراؤنی فلم کی طرح دکھائی دیتی ہے۔

اکاؤنٹ نے AI امیج جنریٹر سے یہ بتانے کو کہا تھا کہ دنیا کے اختتام کی سیلفی کیسی ہوگی. 2 کی تیار کردہ تصاویر، ایک AI امیج جنریٹر، کمزور دل والوں کے لیے نہیں ہیں کیونکہ وہ apocalyptic مناظر دکھاتی ہیں۔خوفناک تصاویر میں بگڑے ہوئے انسانوں کو لمبی انگلیوں اور بڑی آنکھوں کے ساتھ دکھایا گیا ہے۔

تصویر میں ایسے مناظر دیکھنے کو ملے ہیں کہ انسان کی شکلیں خون میں لت پت اور ڈھانچہ نما دکھائی دے رہی ہیں اور وہ کیمرے کے سامنے دیکھ رہے ہیں۔ تصاویر میں ایک خوفناک ڈھانچے جیسی شخصیت کے گرد دھوئیں کے بادل بھی دیکھے جاسکتے ہیں اور خطرناک تباہی کے مناظر دیکھے جا سکتے ہیں۔

Facebook Comments