آٹھ سالہ بچے نے بروسلی کا روپ دھار لیا

Raisu
22اگست2021
(فوٹو : سوشل میڈیا)

ویب ڈیسک: (ٹوکیو) دنیا میں بہت سے ایسے افراد پائے جاتے ہیں جو کڑی محنت اور لگن سے خود کو اپنی پسندیدہ شخصیت جیسا بنا لیتے ہیں لیکن جاپان کے ایک آٹھ سالہ بچے نے روزانہ چار گھنٹے سے زائد ورزش کر کے اپنا بدن بروس لی جیسا بنا کر دنیا کو حیران کر دیا ہے۔

جاپان کے رہائشی 8 سالہ رائیوسی نے پانچ برس کی عمر میں بروس لی کی فلم دی گیم آف ڈیتھ دیکھی تھی جس کے بعد وہ بروس لی کے مداح ہوگئے۔ انہوں نے خود کو بروس لی جیسا بنانے کےلیے روزانہ چار گھنٹے سے زائد سخت ورزش کرنا شروع کر دی۔ کمسن رائیوسی بروس لی جیسا بننے کے لیے روز صبح چھ بجے بیدار ہو کر ڈیڑھ گھنٹہ سخت ورزش کرنے کے بعد اسکول کے لیے روانہ ہو جاتا ہے۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے: درخت سے سر ٹکرا کر ورزش کرنے والا انوکھا شخص

رائیوسی اسکول سے واپس آ کر کک اور ننچکو چلانے کی مشق کرتا ہے اور پھر ایک گھنٹہ دوڑ لگاتا ہے، یوں مجموعی طور پر 8 سالہ بچہ روزانہ ساڑھے چار گھنٹے ورزش کرتا ہے۔ رائیوسی کے والدین پر سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے شدید تنقید بھی کی جاتی ہے کہ اس کے والدین اتنے کم عمر بچے پر ظلم کرتے ہیں، لیکن دوسری طرف انٹرنیٹ پر رائیوسی کے لاکھوں مداح بھی ہیں جو ان کی خوب تعریفیں بھی کرتے ہیں۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے: نوجوان نے لگاتار 10 گھنٹے دوڑ کا ریکارڈ بنا ڈالا

رائیوسی کے فیس بک پر 2 لاکھ 90 ہزار فالوورز ہیں اور انسٹا گرام پر 33 ہزار افراد اس کے مداح ہیں جبکہ یوٹیوب چینل پر وہ آئے دن اپنی ویڈیوز پوسٹ کرتے رہتے ہیں۔

Facebook Comments