اگر بچے پیدا کئے تو سرکاری نوکری بھی نہیں ملے گی

Childrens
23اکتوبر2019
(فوٹو بشکریہ گوگل)

ویب ڈیسک: (آسام) بھارت کی برسراقتدار جماعت بی جے پی نے ریاست آسام میں زیادہ بچوں کے والدین کو سرکاری ملازمت نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

بھارتی ریاست آسام میں بھی مرکز کی طرح بی جے پی کی ہی حکومت ہے، ریاستی کابینہ نے فیصلہ کیا ہے کہ یکم جنوری 2021 سے دو سے زیادہ بچوں والے افراد کو کوئی سرکاری نوکری نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے جب کہ موجودہ سرکاری ملازمین کو بھی 2 بچوں کی پالیسی پر سختی سے عمل کرنا ہوگا۔

سرکاری عملہ جات کے محکمے کے صوبائی کمشنر کے کے دویدی نے اس فیصلے کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ یہ دونوں ضابطے مستقل ملازمین پر نافذ العمل ہوں گے۔ یہ قدم صوبے، ملک اور سماج کی بھلائی کے لیے اٹھایا گیا ہے۔ ان ضابطوں کے تحت جڑواں پیدا ہونے والے بچوں کو ایک ہی سمجھا جائے گا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے: بھارت میں خواتین سڑکوں پر بچے پیدا کرنے پر مجبور کیوں ہیں ؟

واضح رہے کہ آسام اسمبلی نے 2017 میں ‘ 2 بچے پالیسی‘ کی منظوری دی تھی۔ اس پالیسی میں چھوٹے خاندانوں کی حوصلہ افزائی کی بات کی گئی ہے۔ اس پالیسی کے مطابق حکومتی ملازمتوں کے لیے ایسے افراد نااہل قرار دے دیے جائیں گے، جن کے بچوں کی تعداد 2 سے زیادہ ہو گی۔

Facebook Comments