ریستوران میں پیش آیا عجیب واقعہ

03مئی2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (ویانا) آسڑیا میں کھانے سے متعلق شکایت کرنے پر ریستوران مالک آپے سے باہر ہوگیا اور مہمانوں کی شکایت کا ازالہ کرنے کے بجائے کھانا ان کے منہ پر دے مارا۔

تفصیلات کچھ اس طرح ہیں کہ شمالی آسٹریا میں پولیس کو ریستوران سے متعلق انوکھی شکایت موصول ہوئی جہاں ریستوران مالک نے آڈر کی گئی ڈش نہ ملنے کی شکایت کرنے پر مہمانوں کو تشدد کا نشانہ بنانا شروع کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق شمالی آسٹریا میں واقع باڈ شالر باخ پر سیاحوں کی آمد و رفت کا سلسلہ چہل قدمی، خاموشی اور سکون کے باعث جاری رہتا ہے اور جس گیسٹ ہاؤس میں مہمانوں کے ساتھ یہ ناروا واقعہ پیش آیا وہ اچھے گھریلوں کھانوں کیلئے مشہور ہے۔

واقعے کی تفصیلات کچھ اس طرح ہیں کہ بدھ کی رات مذکورہ جگہ جانے والے دو سیاحوں کو خاموشی اور سکون میسر نہیں آیا اور ریستوران مالک کے ہاتھوں انہیں زخمی ہونا پڑا۔ پولیس کے مطابق متاثرہ افراد نے غلط ڈش ملنے پر شکایت کی جس کے بعد 56 سالہ ریستوران مالک نے کھانا ان کے منہ پر دے مارا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر متاثرہ شخص نے تحریر کیا کہ مجھے کبھی ایسا تجربہ نہیں ہوا، میرے خیال سے ریستوران مالک نشے میں تھا۔ متاثرہ سیاحوں کا کہنا تھا کہ ریستوران مالک مسلسل نازیبا زبان استعمال کرتا رہا اور پولیس کی ریستوران آمد کے بعد بھی مالک نے گالم گلوچ بند نہیں کی جبکہ پولیس کو فون کرنے کی کوشش کے دوران ریستوران مالک کی جانب سے مارپیٹ بھی کی گئی۔

Facebook Comments