نزلہ اور زکام کی صورت میں آرام کرنا انتہائی نقصان دہ عمل ہے

16ستمبر2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: نزلہ زکام ویسے تو ایک عام بیماری ہے، جو کسی موسم میں بھی لگ سکتی ہے۔ یہ نزلہ اور زکام بڑھ کر خطرناک صورت بھی اختیار کر سکتا ہے اور آپ بخار یا سینے کے انفیکشن میں مبتلا ہو سکتے ہیں۔

اگر آپ سمجھتے ہیں کہ نزلے اور زکام کی حالت میں آرام کرنا زیادہ مناسب ہے اور دفتر سے ایک دو دن کی چھٹی لے کر سارا وقت بستر میں گزارنا چاہیئے تو آپ کا فیصلہ غلط ہے۔ ماہرین کی رائے اس سے بالکل مختلف ہے۔

برطانوی ڈاکٹر ایرک کا کہنا ہے کہ اگر آپ نزلہ، زکام لگنے کی صورت میں آرام کرنا پسند کرتے ہیں تو آپ اپنی بیماری کو شدید بنا رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ایسی حالت میں آپ کو سارا دن بستر میں گزارنے کے بجائے ہلکی پھلکی ورزش یا چہل قدمی کرنی چاہیئے۔

ڈاکٹر ایرک کہتے ہیں کہ نزلے کی حالت میں آرام کرنا آپ کے گلے میں موجود بلغم کو سخت کر دیتا ہے، جس کے بعد یہ سینے میں جم جاتا ہے اور یہ چیسٹ انفیکشن اور نمونیا کا باعث بھی بنتا ہے۔ اس کے برعکس اگر ہلکی پھلکی ورزش یا چہل قدمی کی جائے اور جسم کو متحرک حالت میں رکھا جائے تو بلغم جمتا نہیں اور یہ بآسانی جسم سے باہر نکل آتا ہے۔

ڈاکٹر ایرک کہتے ہیں کہ ضروری نہیں کہ آپ جم جائیں اور بھاری بھر کم وزش کریں۔ اس کیلئے اپنے روزمرہ کے کام انجام دینا جس میں آپ کا جسم حرکت میں آئے، یا صرف چہل قدمی کرنا بھی کافی ہوگا۔

لہٰذا اگر آپ بھی نزلے کا شکار ہیں تو آرام کرنے کا خیال دل سے نکال دیں اور اپنے روزمرہ کے معمولات جاری رکھیں۔

Facebook Comments