عام آدمی کو ایڈز کے متعلق جاننے کی کتنی ضرورت ہے؟ جانیئے اس رپورٹ میں

HIV Aids
14اپریل2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: اس میں کوئی شک نہیں کہ ایڈز دور حاضر میں پائے جانے والے مہلک ترین امراض میں سے ایک ہے۔ عالمی ادارہ صحت (ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن) کے مطابق دنیا بھر میں اس وقت 3 کروڑ سے زائد افراد ایچ آئی وی ایڈز سے متاثر ہیں، پاکستان میں ایڈز پھیلنے کی سب سے بڑی وجہ نشہ کرنے والے افراد کا سرنجوں کا غلط استعمال ہے۔

یاد رکھیں کہ ایڈز کا مرض ایک وائرس کے ذریعے پھیلتا ہے، جو انسان کے مدافعتی نظام کو ناکارہ بنا دیتا ہے، ایسی صورت میں کوئی بھی بیماری اگر انسانی جسم میں داخل ہوتی ہے تو وہ مہلک صورت اختیار کر لیتی ہے۔ اس جراثیم کو ایچ آئی وی (ہیومن ایمیونوڈیفیشنسی وائرسز) کہتے ہیں۔ اور یہ انسانی جسم کے مدافعتی نظام کو تباہ کرنے والا وائرس بھی کہلاتا ہے، ماہرین کا کہنا ہے کہ صرف احتیاط کے ذریعے ہی اس بیماری سے محفوظ رہنا ممکن ہے۔

جیسا کہ تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ ایچ آئی وی کا شکار ہونے کے چند دن بعد 85 فیصد لوگوں کو انفیکشن کی علامات ظاہر ہوتی ہیں جس کا بروقت علاج مرض کو جان لیوا ہونے سے بچا سکتا ہے۔

ہمارے معاشرے میں آج بھی ایڈز سے متعلق آگاہی ہونے کے باوجود خوف موجود ہے اور ایچ آئی وی سے متاثرہ شخص کو مرض اور معاشرے دونوں سے اپنی بقا کی جنگ لڑنا پڑ رہی ہے، ایڈز کا علاج بروقت تشخیص اور احتیاط کے ساتھ ساتھ مثبت رویہ اپنائے بغیر ممکن نہیں ہے۔ اسی لئے عام آدمی کو اس مرض کے بارے میں شعور حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔

Facebook Comments