انسان کی قوتِ بصارت قوتِ سماعت سے زیادہ مضبوط ہوتی ہے! نئی تحقیق سے ثابت

Girl Eyes
14مارچ2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: (لندن) ماہرین کا کہنا ہے کہ انسان کی دیکھنے کی طاقت سننے کی طاقت سے زیادہ مضبوط ہوتی ہے۔

تفصیلات کچھ اس طرح ہیں کہ انگلینڈ کی یونیورسٹی آف یارک میں حالیہ تحقیق کے دوران ماہرین نے یہ جانا کہ انسان کسی دوسرے انسان کو نام کی بجائے صورت سے جلد پہچاننے کی صلاحیت رکھتاہے۔

تحقیق کے دوران ماہرین نے یہ جاننے کی کوشش کی کہ لوگ کسی کو شکل وصورت سے بہترپہچانتے ہیں یا پھر کسی کا نام اپنی یادداشت میں محفوظ کر لینے سے اسے جلد پہچانتے ہیں؟اس سلسلے میں انہوں نے انسان کے بصارتی نظام اورقوتِ سماعت کا بغور مشاہدہ کیا۔

مذکورہ تحقیق میں ایک ہزار سے زائد افراد کو شامل کیا گیا،تحقیق میں شامل افراد کو پہلے ایک شخص کی تصویر دکھا کر اس کا نام بتایا گیا،جب ان لوگوں سے تصویر کے بارے میں دریافت کیا گیا تو سب نے صحیح نام بتایا۔

اس کے بعد اسی شخص کی کوئی دوسری تصویر جب لوگوں کو دکھائی گئی تو سب نے تصویر تو پہچان لی لیکن اکثر لوگ اسکا نام یاد نہیں رکھ پائے۔

ماہرین نے اس تحقیق سے نتیجہ اخذ کیا کہ عام طور پر انسان کا نظامِ بصارت قوتِ سماعت سے زیادہ مضبوط ہوتا ہے کیونکہ نظامِ بصارت دماغ سے منسلک ہوتا ہے اور انسان جب کچھ دیکھتا ہے تو دماغ کے خلیات مطلوبہ معلومات فوراً فراہم کرتے ہیں۔

تحقیقاتی ٹیم کے پروفیسر جین کا کہنا ہے کہ یہ مطالعہ ہمارے لئے بے حد حیرت انگیز تھا کیونکہ ماہرین آج تک یہی سمجھتے رہے ہیں کہ انسان کی سننے کی صلاحیت دیکھنے کے مقابلے میں زیادہ بہتر ہوتی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم روزمرہ کی بنیادوں پر کئی ایسے چہرے دیکھتے ہیں جنہیں بعد میں دیکھنے پر پہچان تو لیتے ہیں لیکن انکے نام نہیں یاد رکھ پاتے،اور اس تحقیق سے بھی یہی ثابت ہوا ہے۔

Facebook Comments