عالمی ادارۂ صحت کے مطابق پاکستان میں ذیابیطس کا مرض خطرناک حد تک بڑھنے لگا

Diabetes
10مارچ2019
(فوٹو فائل)

ویب ڈیسک: عالمی ادارۂ صحت کے مطابق پاکستان کی 26 فیصد آبادی ذیابیطس کے مرض کا شکار ہے، اس خطرناک دوڑ میں صوبہ سندھ سب سے آگے ہے جہاں کل آبادی کا 30 فیصد حصہ اس بیماری میں مبتلا ہے۔

علامات اور وجوہات

ذیابیطس کی بہت سی علامات ہیں جن میں پیشاب کا بار بار آنا، وزن کا کم ہونا، بار بار بھوک لگنا اور پاؤں میں جلن ہونا شامل ہیں، ذیابیطس کے باعث دل، خون کی نالیاں،گردے اور دیگر جسمانی اعضا بھی متاثر ہو سکتے ہیں، اس بیماری کی اہم ترین وجوہات میں سے غیر متحرک زندگی گزارنا اور غیر معیاری غذا کا استعمال سرِ فہرست ہیں۔

ایک تحقیق کی روشنی میں وہ افراد جو ذیابیطس کی بیماری کے ابتدائی مراحل سے گزر رہے ہوں اگر معمول سے 20 منٹ زیادہ پیدل چلنا شروع کر دیں تو ان میں دل کے دورے کا خطرہ کافی حد تک کم ہو سکتا ہے، علاوہ ازیں دیگر امراضِ قلب میں بھی 8 فیصد تک کمی واقع ہو سکتی ہے۔

ماہرین کہتے ہیں کہ ذیابیطس کو اگر ابتدائی مراحل میں ہی تشخیص کر لیا جائے تو اس کی روک تھام میں آسانی ہو سکتی ہے، لہٰذا بہت ضروری ہے کہ اس کی علامات سے آگاہی حاصل کی جائے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ مائیں اگر بچوں کو اپنا دودھ پلائیں تو مستقبل میں انکے بچے اس موذی مرض سے محفوظ رہ سکتے ہیں، اس کے علاوہ اسکولوں میں جسمانی سرگرمیوں کو بڑھا کر اور سافٹ ڈرنکس، جنک فوڈ کو بچوں کی پہنچ سے دور رکھ کر بھی مستقبل میں بچوں کو اس بیماری سے بچایا جا سکتا ہے۔

پاکستان میں سال 2017ء میں کئے گئے نیشنل ڈائیبٹیز سروے کے مطابق ملک کی کل آبادی کا 26.3 فیصد حصہ ذیابیطس کے مرض میں مبتلا ہے، جبکہ مستقبل میں 14.4 فیصد لوگ مزید اس مرض میں مبتلا ہو سکتے ہیں، نیشنل ڈائیبٹک سروے کے مطابق صوبہ سندھ کی 30 فیصد سے زائد آبادی ذیابیطس کے مرض کا شکار ہے، دوسرے نمبر پر پنجاب ہے جہاں 20 سال سے زائد عمر کے 28.8 فیصد لوگ اس مرض میں مبتلا ہیں، بلوچستان 28.1 فیصد کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے جبکہ خیبر پختونخوا میں 12.9 فیصد لوگ ذیابیطس کی گرفت میں ہیں۔

مذکورہ ڈائیبٹک سروے میں پورے ملک سے 10 ہزار 8 سو سے زائد افراد کے ٹیسٹ کر کے رپورٹ تیار کی گئی۔

واضح رہے کہ ایک اندازے کے مطابق پاکستان ذیابیطس کے مریضوں کی تعداد کے حوالے سے دنیا کا ساتواں بڑا ملک ہے جبکہ 2030ء تک یہ دنیا کا چوتھا بڑا ملک بن جائے گا۔

نوٹ

پاکستان سمیت دنیا بھر میں14 نومبر کو ذیابیطس سے آگاہی کا عالمی دن منایا جاتا ہے۔

Facebook Comments