فالج کیوں ہوتا ہے اسکی تشخیص کیسے کی جائے اور بچاؤ کے طریقے کیا ہیں؟

Paralyzed Person
08فروری2019
(فوٹو فلنٹ رہب ڈاٹ کام)

ویب ڈیسک: فالج ایک ایسی بیماری ہے جو خون کی شریانیں بند ہونے یا پھٹنے کی وجہ سے لاحق ہوتی ہے،جب فالج کا حملہ ہوتا ہے تو دماغ کے متاثرہ حصوں میں موجود خلیات آکسیجن اور خون کی فراہمی بند ہونے کی وجہ سے مرنا شروع ہو جاتے ہیں۔

اس کا نتیجہ یہ نکلتا ہے کہ جسم میں کمزورمحسوس ہو نے لگتی ہے،بولنے اور دیکھنے میں دقت کا سامنا ہو تا ہے،جسکی وجہ سے جسم کا پورا ،آدھا یا کچھ حصہ ہمیشہ کیلئے مفلوج ہو سکتا ہے۔

ایک رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں سب سے زیادہ معذور افراد فالج کی وجہ سے ہوتے ہیں،دنیا بھر میں ہر دس سیکنڈ میں ایک فرد اس بیماری میں مبتلا ہوتا ہے،ماہرین کے مطابق مردوں کے مقابلے میں خواتین کو زیادہ فالج ہونے کا خدشہ ہوتا ہے۔

فالج ہونے کی بڑی وجوہات میں سے ہائی بلڈ پریشر،مرغن غذائیں،سگریٹ نوشی اور تمباکو سے تیار کردہ اشیاء جیسے گٹکا وغیرہ سر فہرست ہیں،اسکے علاوہ جو لوگ جسمانی مشقت نہیں کرتے اور اس پر ورزش بھی نہیں کرتے تو ایسے میں وہ لوگ اس بیماری کا آسان ہدف بن جاتے ہیں۔

فالج کی تشخیص کیسے کی جائے؟

ماہرین کے مطابق فالج دنیا بھر میں اموات اور طویل مدتی معذوری کی سب سے بڑی وجہ ہے،ڈاکٹرز کہتے ہیں کہ اگر کسی فرد پر فالج کا حملہ ہوجائے تو متاثرہ شخص کو اگر تین گھنٹے کے اندر اندر ابتدائی طبی امداد دے دی جائے تو اس فرد کو عمر بھر کی معذوری سے بچایا جا سکتا ہے،لیکن مسئلہ یہ ہے کہ اکثر افراد کو معلوم ہی نہیں ہوپاتا کہ انہیں یا انکے قریب بیٹھے کسی شخص پر فالج کا حملہ ہوا ہے۔

ماہرین نے اس سلسلے میں کچھ طریقے تجویز کئے ہیں جنہیں اپنا کر فالج کی تشخیص ممکن بنائی جا سکتی ہے تاکہ جلد سے جلد ڈاکٹر سے رجوع کیا جا سکے۔

فالج کی تشخیص کیلئے چار طریقوں پر عمل کیا جا سکتا ہے۔

اگر آپ سمجھتے ہیں کہ کسی فرد پر فالج کا حملہ ہوا ہے تو آپ اسے مسکرانے کیلئے کہیں،فالج کا شکار فرد مسکرا نہیں سکتا کیونکہ اس کے چہرے کے عضلات مفلوج ہو جاتے ہیں۔

جس فرد پر آپکو گمان ہو کہ اس پر فالج کا حملہ ہو اہے تو آپ اس سے کہیں کہ کوئی عام سا جملہ کہے ،اگروہ جملہ ٹھیک طریقے سے ادا نہ کر پائے تو سمجھ لیجئے کہ اس پر فالج کا حملہ ہو چکا ہے۔

فالج کے شکار فرد کو کہیں کہ اپنے دونوں ہاتھ اٹھائے اگر وہ اپنے دونوں ہاتھ اٹھا نہ پائے تو یہ بات یقینی ہے کہ اس پر فالج نے حملہ کر دیا ہے۔

فالج میں مبتلا شخص اپنی زبان کو سیدھا نہیں رکھ پائے گا، ایسے شخص کی زبان دائیں یا بائیں جانب ٹیڑھی ہو جاتی ہے۔

ایسی تمام کیفیات سے فالج کی علامات ظاہر ہو تی ہیں،اگر آپ اپنے آپ میں یا کسی دوسرے فرد میں ایسی علامات پائیں تو فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کر یں۔

فالج سے بچاؤ کیسے ممکن ہے؟

ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ فالج سے بچاؤ کی آسان ترکیب متحرک زندگی گزارنا ہے،ایک تحقیق کے مطابق دنیا بھر میں صرف دس منٹ کی ورزش کرنے والے افراد میں فالج کا خطرہ ایک تہائی حد تک کم ہو جاتا ہے۔

اس کے علاوہ کھانے میں نمک اور مرغن غذاؤں کا کم استعمال بھی فالج کے خطرے کو کم کرتا ہے۔

سگریٹ نوشی بھی فالج کی ایک اہم وجہ ہے جس ترک کرکے فالج کے خطرے سے محفوظ رہا جا سکتا ہے۔

Facebook Comments