وزیراعظم پاکستان کا تعمیراتی شعبے کیلئے تاریخی پیکیج کا اعلان

PM has announced a historic package for the construction sector
03اپریل2020
(فوٹو سوشل میڈیا)

ویب ڈیسک: (اسلام آباد) وزیراعظم پاکستان عمران خان نے تعمیراتی شعبے کے لیے تاریخی پیکیج کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ کنسٹرکشن سیکٹر میں اس سال سرمایہ لگانے والوں سے ذرائع آمدن کا نہیں پوچھا جائے گا۔

سینئر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کنسٹرکشن سیکٹر کھولنے جا رہے ہیں جس کا مقصد یہ ہے کہ لوگوں کو روزگار ملے، کنسٹرکشن سیکٹر والوں کے لیے آسانیاں پیدا کر رہے ہیں، گھر بنائیں، سڑکیں بنائیں تاکہ اس سیکٹر میں کام ہو سکے، لوگ کو بھوک اور غربت سے بچانے کیلئے کنسٹرکشن سیکٹر کھول رہے ہیں، جو بھی اس سال کنسٹرکشن سیکٹر میں سرمایہ لگائیں ان کی انکم نہیں پوچھی جائے گی کہ پیسہ کہاں سے آیا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے: حکومت نے عوام کو بجلی اور گیس کے بلوں پر ریلیف دے دیا

وزیراعظم نے بتایا کہ فیصلہ کیا ہے کنسٹرکشن سیکٹر میں فکس ٹیکس کر رہے ہیں نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کےتحت کنسٹرکشن میں اگر100 روپے ٹیکس ہو گا تو 90 روپے معاف کر دیں گے، صوبوں کیساتھ مل کر سیلز ٹیکس بھی کم کر رہے ہیں، پنجاب اور کے پی میں سیلز ٹیکس کو 2 فیصد پر لے آئے ہیں اگر کوئی فیملی اپنا گھر بیچنا چاہتی ہے تو اس پر کوئی کیپٹل گین ٹیکس نہیں لگےگا۔

یہ بھی ملاحظہ کیجئے: ایل پی جی کی قیمتوں میں نمایاں کمی کر دی گئی

ان کا کہنا تھا کہ نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم کے لیے 30 ارب روپے کی سبسڈی بھی دیں گے اور اسے کام کو آگے بھی بڑھائیں گے، کنسٹرکشن کو ہم انڈسٹری کا اسٹیٹس دے رہے ہیں اور کنسٹرکشن انڈسٹری ڈیویلپمنٹ بورڈ تشکیل دے رہے ہیں، کنسٹرکشن انڈسٹری کے لیے ایک الگ ادارہ بن جائے گا۔

Facebook Comments